بٹر اعظم خان پر فلسطینی پرچم کی نمائش پر جرمانہ

اعظم خان 26 نومبر 2023 کو قومی T20 میچ کے دوران اپنے بلے پر فلسطینی پرچم دکھا رہے ہیں۔ — رپورٹر

کراچی: وکٹ کیپر بلے باز اعظم خان پر میچ فیس کا 50 فیصد جرمانہ عائد کر دیا گیا ہے۔ بیس نے اتوار کو کراچی میں قومی ٹی ٹوئنٹی میچ کے دوران اپنے بلے پر فلسطینی پرچم آویزاں کیا۔

ہٹر نے لباس اور آلات سے متعلق ضوابط کی خلاف ورزی کی۔ (غیر منظور شدہ لوگو یا سیاسی پیغامات دکھاتا ہے)

شاندار کھلاڑی کراچی وائٹس کے لیے کھیل رہے تھے اور میچ ریفری محمد جاوید کے بلانے سے قبل اتوار کو لاہور بلیوز کے خلاف 35 رنز بنائے۔

اس معاملے سے باخبر ذرائع نے اس کی تصدیق کی ہے۔ جغرافیہ کی خبریں کہ جونیئر ہٹرز کو ان کی میچ فیس کا 50% جرمانہ کیا جائے گا۔ ہٹرز کو پہلے امپائرز نے خبردار کیا تھا کہ وہ غیر منظور شدہ لوگو ڈسپلے نہ کریں۔ اس کے بلے پر (فلسطینی پرچم)۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ یہ آئی سی سی کے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی ہوگی، جس پر پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) بھی دستخط کنندہ ہے۔

ذرائع کے مطابق اعظم نے امپائر کو بتایا کہ ان کے تمام بلے پر ایک ہی اسٹیکر لگا ہوا ہے۔

آئی سی سی کے لباس اور سازوسامان کے ضوابط میں کہا گیا ہے کہ کھلاڑیوں کو ایسے پیغامات دکھانے کی اجازت نہیں ہونی چاہیے جس میں سیاسی، مذہبی یا نسلی سرگرمیاں یا وجوہات شامل ہوں۔

پی سی بی حکام نے تصدیق کر دی۔ جغرافیہ کی خبریں کہ اعظم پر لباس اور آلات کے ضوابط کی خلاف ورزی کا الزام لگایا گیا تھا۔

ذرائع نے اس بات کی بھی تصدیق کی کہ قومی ٹی ٹوئنٹی کپ کے گزشتہ دو میچوں کے درمیان اعظم کے بلے پر ایک ہی اسٹیکر لگا تھا، تاہم آج کے میچ سے پہلے کسی نے انہیں خبردار نہیں کیا۔

اسی طرح کے اقدام میں اس سال اکتوبر میں۔ پاکستان کرکٹ ٹیم نے آئی سی سی مینز کرکٹ ورلڈ کپ کے دوران اپنی مستقل حمایت کا اظہار کیا اور اسرائیل کے ہاتھوں مصائب کا شکار تمام فلسطینیوں کے لیے اپنی دعاؤں کا اشتراک کیا۔

ہندوستانی فٹ بال شائقین اور کرکٹ ماہرین نے کھلاڑیوں کی فلسطین کے لیے مسلسل حمایت پر سوال اٹھاتے ہوئے کھیل کی گورننگ باڈی آئی سی سی سے پوچھا ہے۔ آیا ٹورنامنٹ میں ایسی حرکتوں کی اجازت ہے یا نہیں۔

ذرائع کے مطابق پی سی بی نے کھلاڑیوں کے رویے سے متعلق دلائل کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’ٹیم کا اتحاد ظاہر کرنا ذاتی فیصلہ ہے‘۔

اپنی رائےکا اظہار کریں